FreeCurrencyRates.com

इंडियन आवाज़     20 May 2024 01:12:00      انڈین آواز

قبل از وقت پیدائش سے ہر سال دس لاکھ بچے موت کا شکار 

(Last Updated On: )

اے ایم این
اقوام متحدہ کے مختلف اداروں اور اس کے شراکت داروں کی ایک نئی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ دنیا میں ہر سال قبل از وقت پیدا ہونے والے دس لاکھ بچے موت کا شکار ہو جاتے ہیں، رپورٹ میں بچوں کی اموات کو روکنے کے لئے بچوں کی صحت و بقاء کی صورتحال تیزی سے بہتر بنانے کی غرض سے متفقہ اقدامات کی ضرورت پر زور دیا گیاہے۔
”قبل از وقت پیدائش: عملی اقدامات کی دہائی’ کے عنوان سے جاری کردہ اس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اندازے کے مطابق 2020 میں 13.4 ملین یعنی ایک کروڑ تیس لاکھ بچے قبل از وقت پیدا ہوئے تھے جن میں سے قریباً دس لاکھ طبی پیچیدگیوں کے باعث جانبر نہ ہو سکے۔
یہ رپورٹ بہت سے اداروں نے تیار کی ہے جن میں اقوام متحدہ کا ادارہ برائے اطفال (یونیسف) اور عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) نیز زچہ بچہ اور نوعمر بچوں کی صحت کے لئے شراکت (پی ایم این سی ایچ) بھی شامل ہیں۔ یہ رپورٹ قبل از وقت پیدا ہونے والے بچوں کی اموات پر قابو پانے کے لئے مستقبل کی حکمت عملی کا خاکہ پیش کرتی ہے۔ یہ ایک ایسا مسئلہ ہے جس کے حجم اور سنگینی پر کبھی زیادہ توجہ نہیں دی گئی۔
‘معطل’ پیش رفت
‘پی ایم این سی ایچ’ کی ایگزیکٹو ڈائریکٹر ہیلگا فوگسٹیڈ کا کہنا ہے کہ ”زچہ بچہ کی صحت اور قبل از وقت پیدائش کی روک تھام کے حوالے سے پیش رفت جمود کا شکار ہے۔”اس سلسلے میں اب تک حاصل ہونے والی کامیابیاں کووڈ۔19 وبا، موسمیاتی تبدیلی، بڑھتے ہوئے تنازعات اور رہن سہن کے اخراجات میں اضافے جیسے بحرانوں کے تباہ کن ملاپ کی بدولت غارت ہوتی جا رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ ”حکومتیں، عطیہ دہندگان، نجی شعبہ، سول سوسائٹی، والدین اور طبی پیشہ ور لوگ شراکت میں کام کرتے ہوئے اس خاموش ہنگامی صورتحال کے حوالے سے دنیا کو متنبہ کر سکتے ہیں۔”اس کے لئے قبل از وقت پیدائش کی روک تھام اور اس حوالے سے طبی نگہداشت کے لئے کی جانے والی کوششوں کو قومی سطح پر صحت و ترقی کے اقدامات میں مرکزی جگہ دینا ہو گی اور ہر جگہ خاندانوں، معاشروں اور معیشتوں کی مدد کرنا ہو گی۔
‘بہت جلد پیدائش’
گزشتہ ایک دہائی کے عرصہ میں دنیا کے کسی بھی خطے میں قبل از وقت پیدائش کی شرح میں کوئی تبدیلی نہیں آئی۔ رپورٹ کے مطابق 2010 اور 2020 کے درمیان 152 ملین بچے اپنی پیدائش کے مقررہ وقت سے بہت پہلے پیدا ہوئے تھے۔قبل از وقت پیدائش حمل کے 37 ہفتوں سے پہلے ہوتی ہے جبکہ مکمل حمل 40 ہفتوں کا ہوتا ہے۔رپورٹ میں قبل از وقت پیدائش کے حوالے سے لنڈن سکول آف ہائیجین اینڈ ٹراپیکل میڈیسن کے اشتراک سے ڈبلیو ایچ او اور یونیسف کے ترتیب دیے گئے تازہ ترین تخمینے بھی شامل ہیں۔
بچوں کی اموات کی نمایاں وجہ
رپورٹ کے مطابق قبل از وقت پیدائش بچوں میں اموات کی سب سے بڑی وجہ ہے جو پانچ سال کی عمر سے پہلے انتقال کر جانے والے ہر پانچ میں ایک سے زیادہ بچوں کی موت کا سبب ہوتی ہے۔ قبل از وقت پیدا ہونے والے بچوں کی جان بچ بھی جائے تو انہیں عمر بھر طبی مسائل کا سامنا رہتا ہے اور ان کے معذور ہو جانے یا ان کی سست رو بڑھوتری کے خدشات بھی بڑھ جاتے ہیں۔رپورٹ کے مطابق کم آمدنی والے ممالک میں قبل از وقت پیدا ہونے والے ہر دس بچوں میں سے ایک کی جان ہی بچ پاتی ہے جبکہ اچھی آمدنی والے ممالک میں ایسے ہر دس میں سے نو سے زیادہ بچے زندہ رہتے ہیں۔عراق میں قبل از وقت پیدا ہونے والا ایک بچہ ہسپتال کے انتہائی نگہداشت وارڈ میں ایک ماہ سے داخل ہے۔© UNICEF/Murtadha Ridha عراق میں قبل از وقت پیدا ہونے والا ایک بچہ ہسپتال کے انتہائی نگہداشت وارڈ میں ایک ماہ سے داخل ہے۔
تحفظ زندگی کی حکمت عملی
اقوام متحدہ کے ادارے بشمول اقوام متحدہ کا پاپولیشن فنڈ (یو این آئی سی ای ایف)، ڈبلیو ایچ او اور یونیسف زندگیوں کو بچانے کے لئے متعدد اقدامات پر زور دے رہے ہیں جن میں نومولود بچوں کی صحت پر سرمایہ کاری میں اضافہ کرنا، قومی طبی پالیسیوں پر عملدرآمد کی رفتار میں تیزی لانا، ہر شعبے میں ہونے والی کوششوں کو مربوط کرنا اور علاج کو معیاری اور اس تک رسائی کو مساوی بنانے میں مدد دینے کے لئے مقامی لوگوں کی قیادت میں اختراع اور تحقیق میں معاونت کرنا شامل ہیں۔ڈبلیو ایچ او میں زچہ بچہ، نوعمر بچوں بالغوں اور معمر افراد کی صحت سے متعلق شعبے کے ڈائریکٹر انشو بینرجی نے کہا ہے کہ ”قبل از وقت پیدا ہونے والے ان کمزور بچوں اور ان کے خاندانوں کی معیاری طبی نگہداشت یقینی بنانا بچوں کی صحت اور بقا میں بہتری لانے کے لئے لازمی اہمیت رکھتا ہے۔وہ کہتی ہیں کہ ”اس حوالے سے قبل از وقت پیدائش کی روک تھام کے لئے پیش رفت بھی ہونی چاہیے جس کا مطلب یہ ہے کہ ہر خاتون کو حمل سے پہلے اور اس کے دوران معیاری طبی خدمات تک رسائی حاصل ہو اور وہ بچے کی صحت کو لاحق خطرات کی نشاندہی اور ان سے نمٹنے کی اہلیت رکھتی ہو۔”
ڈبلیو ایچ او میں بچوں کی صحت و ترقی کے شعبے کی سربراہ ڈاکٹر برناڈٹ ڈیلمینز نے کہا ہے کہ بچوں کی صحت کو بہتر بنانے کے لئے ہمیں صرف ان کی فوری جسمانی ضروریات پوری کرنے پر ہی توجہ نہیں دینی بلکہ یہ بھی یقینی بنانا ہے کہ وہ موثر طور سے سیکھنے اور اپنے اردگرد موجود لوگوں کے ساتھ مثبت اور جذباتی طور پر مفید تعلقات بنانے کے قابل ہوں۔ سیکھنے، صحت اور بہبود کے لئے زندگی بھرکے مضمرات کے ساتھ صحت مند دماغ کی نشوونما کی بنیاد ڈالنا جسمانی پرورش سے متعلق نگہداشت کرنے والوں کی ذمہ داری ہے۔
رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ابتدائی بچپن کی نمو کے لئے سازگار ماحول تخلیق کرنے کی کوششیں پیوستہ اقدامات کا تقاضا کرتی ہیں جن کے ساتھ صحت، تعلیم، نکاسی آب اور تحفظ کی خدمات سمیت مختلف شعبوں میں مخصوص مالی وسائل کی فراہمی ضروری ہے۔ اس حوالے سے بچوں کے لئے قابل استطاعت اور اعلیٰ معیار کی نگہداشت تک مساوی رسائی میں معاون خاندان دوست پالیسیاں تشکیل دینا بھی اہم ہے۔

Please email us if you have any comment.

خبرنامہ

ایران: صدر رئیسی کے ہیلی کاپٹر کی تلاش کے لیے سرچ آپریشن جاری ہے۔

ایران: صدر رئیسی کے ہیلی کاپٹر کی تلاش کے لیے سرچ آپریشن جاری ...

ناہمواریوں کے باوجود عالمی معیشت میں بہتری کی امید

ترقی پذیر ممالک میں محنت کشوں کے معاوضوں میں اضافہ ہو رہا ہے ...

معاشی تبدیلیاں اور انتخابی نتائج…

عام لوگوں کی تنخواہیں ٹھپ ہو کر رہ گئی ہیں جبکہ سرمایہ دار بے ...

MARQUEE

Singapore: PM urges married Singaporean couples to have babies during year of Dragon

AMN / WEB DESK Prime Minister of Singapore Lee Hsien Loong has urged married Singaporean couples to have ba ...

Himachal Pradesh receives large number of tourists for Christmas and New Year celebrations

AMN / SHIMLA All the tourist places of Himachal Pradesh are witnessing large number of tourists for the Ch ...

Indonesia offers free entry visa to Indian travelers

AMN / WEB DESK In a bid to give further boost to its tourism industry and bring a multiplier effect on the ...

MEDIA

Tamil Nadu CM Stalin attacks BJP over ‘saffron’ Doordarshan logo

AMN DMK Chief and Tamil Nadu chief minister MK Stalin on Sunday slammed the Bharatiya Janata Party (BJP) f ...

Broadcasting Authority Penalises TV Channels for Hate-Mongering, Orders Removal Of Offensive Programs

Broadcasting Authority (NBDSA) Orders Times Now Navbharat, News 18 India, Aaj Tak to Take Down 3 TV Shows ...

RELIGION

Uttarakhand: Portals of Badrinath Shrine open for Pilgrims

The portals of the famous Badrinath shrine, located in Chamoli district of Uttarakhand, opened this morning at ...

Mata Vaishno Devi Bhawan Decorated With Imported Flowers Ahead Of Navratri Festival

AMN In Jammu, ahead of the festivl of Navratri, Katra and Mata Vaishno Devi Bhawan is decorated with import ...

@Powered By: Logicsart