इंडियन आवाज़     21 Apr 2018 03:39:37      انڈین آواز

ہالینڈانتخابات میں اسلام مخالف گیرٹ وِلڈرز کو شکست

WEB DESK

Mark Rutte netherland TIAیورپی رہنماؤں نے اطمینان کا اظہار کیا

ہالینڈ کے پارلیمانی انتخابات میں وزیراعظم مارک رُٹے کی پیپلز پارٹی برائے فریڈم اور ڈیموکریسی نے کامیابی حاصل کی ہے۔ اسلام مخالف اور انتہائی دائیں بازو کے سیاستدان گیرٹ وِلڈرز کو شکست کا سامنا رہا۔
ڈچ وزیراعظم مارک رُٹے نے پارلیمانی انتخابات میں انتہائی دائیں بازو کے سیاستدان گیرٹ ولڈرز کو شکست دے دی ہے۔ انتخابی کامیابی کے بعد ہالینڈ کے وزیراعظم مارک رُٹے نے اپنے حامیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہالینڈ کے عوام نے بھرپور انداز میں عوامیت پسندی کو مات دے دی ہے اور یہ جیت ڈچ عوام کی ہے۔ دوسری جانب گیرٹ وِلڈرز نے تسلیم کیا ہے کہ وہ الیکشن میں ویسی کامیابی حاصل نہیں کر سکے، جس کی وہ توقع کر رہے تھے لیکن یہ کہ وہ پارلیمنٹ میں ایک مضبوط اپوزیشن کا کردار ادا کریں گے۔
کچھ ہفتے قبل تک وِلڈرز کی فریڈم پارٹی رائے عامہ کے جائزوں میں خاصی سبقت لیے ہوئے تھی لیکن الیکشن سے قبل اُس کی مقبولیت میں حیران کن کمی واقع ہوئی۔ اب تک ڈالے گئے ووٹوں کی جتنی گنتی مکمل ہوئی ہے، اُس کے مطابق وزیراعظم مارک رُٹے کی سیاسی جماعت پیپلز پارٹی برائے فریڈم اور ڈیموکریسی کو پارلیمان میں 32 نشستیں یقینی طور پر حاصل ہوئی ہیں۔ فریڈم پارٹی اور دو دوسری جماعتوں کو اُنیس اُنیس سیٹیں ملی ہیں۔
پندرہ مارچ کے الیکشن میں رجسٹرڈ ووٹرز میں سے تقریباً 78 فیصد نے اپنا حقِ رائے دہی استعمال کیا۔ ڈالے گئے ووٹوں کی گنتی مکمل ہونے کے بعد ہی تعین ہو سکے گا کہ درحقیقت کس پارٹی کو کتنی نشستیں حاصل ہوں گی۔ ہالینڈ میں متناسب نمائندگی کا نظام رائج ہے اور ہر پارٹی کو حاصل ہونے والی ووٹوں کے مطابق پارلیمانی نشستیں دی جاتی ہیں۔ ڈچ پارلیمان میں مجموعی نشستوں کی تعداد 150 ہے۔
یورپی رہنماؤں کا اظہار اطمینان
جرمن چانسلر انگیلا میرکل نے ہالینڈ کے پارلیمانی انتخابات میں وزیراعظم مارک رُٹے کی کامیابی پر اُنہیں مبارک باد دی ہے۔ میرکل نے ڈچ وزیراعظم سے کہا کہ وہ اپنے دوست اور ہمسایہ ملک کے ساتھ مزید تعاون کا سلسلہ جاری رکھیں گی۔ اسی طرح یورپی کمیشن کے صدر ژاں کلود ینکر کے ترجمان کے مطابق ینکر نے انتخابات میں واضح کامیابی پر مارک رُٹے کو مبارک باد دی ہے اور کہا ہے کہ عوام نے یورپ کے حق میں اور انتہا پسندوں کے خلاف ووٹ دیا ہے۔ سویڈن کے وزیراعظم نے بھی اپنے ڈچ ہم منصب کو مبارک باد کا پیغام روانہ کیا ہے۔ ایسا ہی پیغام فرانس کے صدر فرانسوا اولانڈ اور وزیر خارجہ ژاں مارک ایغو نے بھی بھیجا ہے۔
بدھ، سولہ جنوری کے روز ہونے والے ڈچ انتخابات یورپ کے انتہائی دائیں بازو کے حلقے کے لیے مسرت کا باعث نہیں رہے۔ بریگزٹ ریفرنڈم اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتخابات میں کامیابی سے یورپی اتحاد پر شکوک رکھنے والوں اور مہاجرین دوست پالیسیوں کے مخالفین کو تقویت حاصل ہوئی تھی۔ تجزیہ کاروں کا خیال ہے کہ ہالینڈ کے انتخابات نے ان حلقوں کے سیاسی غبارے سے ہوا نکال دی ہے۔

ا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

QAUMI AWAAZ

Justice Rajinder Sachar is no more

  AMN / NEW DELHI Well know legal luminary, human righ activist and former Chief Justice of the Delhi ...

“Sabka Saath, Sabka Vikas” is not mere a slogan, says Naqvi

Our Correspondent / Rampur Union Minority Affairs Minister Mukhtar Abbas Naqvi today said that “Sabka Saath ...

Supreme Court judgment recognises powers of NCMEI

Our Correspondent / NEW DELHI The Supreme Court has ruled that the National Commission for Minority Education ...

SPORTS

TTFI recommends CWG medalist Manika Batra’s name for Arjuna Award

The Table Tennis Federation of India (TTFI) has recommended Manika Batra, the country's only quadruple medalli ...

Bengaluru FC wins Super Cup Football tournament

Bengaluru FC have won the inaugural edition of Super Cup Football tournament.=In the final at the Kalinga Stad ...

CWG 2018: Shuttlers continue India’s medal rush in Gold Coast

Gold Coast India's badminton players continued their fine run here on Sunday with Saina Nehwal and Kidambi ...

@Powered By: Logicsart