FreeCurrencyRates.com

इंडियन आवाज़     29 Jul 2017 05:19:29      انڈین آواز

گؤ کشی کے نام پر دلتوں اور مسلمانوں پر حملوں کے خلاف ملک بھر میں مظاہرے

ناٹ ان مائی ںیم
گؤ کشی کے نام پر دلتوں اور مسلمانوں پر حملوں کے خلاف ملک بھر میں مظاہرے

AMN/ نی دہلی
not in my name3

ملک کے مختلف حصوں میں گاؤکشی کے نام پر دلتوں اور مسلمانوں پر کیے جانے والے حالیہ حملوں کے خلاف گزشتہ ٢٨ جون کو ملک کے مختلف شہروں میں ہزاروں لوگوں احتجاج کیا۔
ا س تحریک کو ’ناٹ ان مائی نیم‘ کا نام دیا گیا ہے، یعنی ہمارے نام پر خون نہ بہایا جائے، یہ تشدد ہمیں منظور نہیں۔تحریک فیس بک پر فلم ساز صبا دھون کی ایک پوسٹ سے شروع ہوئی جس میں انھوں نے لکھا تھا کہ اب اس تشدد کے خلاف آواز اٹھانے کا وقت آگیا ہے.
مظاہرین ایسے پلے کارڈز اٹھائے ہوئے تھے، جن پر لکھا تھا،’not in my name’ ’میرا نام لے کر نہیں‘۔ مظاہرین نے وزیر اعظم نریندر مودی کی حکومت کی اس خاموشی کی بھی مذمت کی، جو اس نے اقلیتی اور ڈالت آبادی پر کیے جانے والے حملوں کے بارے میں اب تک خموشی اختیار کر رکھی ہے۔

نئی دہلی میں کیے جانے والے ایسے ایک احتجاجی مارچ میں ہزاروں افراد شریک ہوئے، جن میں بزرگ شہری اور بہت سے والدین بھی تھے، جو اپنے بچوں کو بھی ساتھ لائے تھے۔ ان افراد نے اپنے ہاتھوں میں شمعیں لیے امن کے لیے گیت بھی گائے۔
اسی طرح ممبئی میں بھی ایک مظاہرہ کیا گیا، جس میں بارش کے باوجود بالی وُڈ کے کئی اداکاروں کے ساتھ ساتھ سینکڑوں عام شہریوں نے بھی شرکت کی۔ اس کے علاوہ بھارت کے کئی دیگر بڑے شہروں میں بھی ہندو قوم پسند حملہ آوروں کے خلاف ایسے ہی احتجاجی مظاہرے اور مارچ کیے گئے۔

2014ء میں جب سے نریندر مودی کی سیاسی جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی اقتدار میں آئی ہے،ہندو گو رکشک حملہ آور کم از کم ایک درجن مسلمان مردوں اور لڑکوں کو سرعام تشدد کر کے ہلاک کر چکے ہیں۔

حب سے بی جے پی کی حکومت آئی ہے، گائے کی حفاظت کےنام پر تشدد کے واقعات میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے۔ ہریانہ، مغربی بنگال، راجستھان، اتر پردیش، مدھیہ پردیش۔۔۔ ملک کی کئی ریاستوں میں ہجوم کے تشدد میں لوگوں کی جانیں گئی ہیں۔
تازہ ترین واقعے کی اطلاع جھاڑکھنڈ سے ہے جہاں منگل کے دن گو کشی کے شبہے میں ایک شخص کو بری طرح پیٹا گیا اور اس کےگھر کو آگ لگا دی گئی۔
گذشتہ چند دنوں میں مغربی بنگال میں تین مسلمان نوجوانوں کو مبینہ طور پر گائے کی چوری کےالزام میں ہلاک کیا گا ہے۔ عید سے ذرا پہلے سری نگر میں ایک پولیس افسر کو شہر کی جامع مسجد کے باہر پیٹ پیٹ کر ہلاک کردیا گیا۔

حالیہ واقعے میں گزشتہ جمعے کے روز نئی دہلی کے مضافات میں ایک ٹرین میں سوار تقریباﹰ بیس لوگو نے چار مسلمانوں کو تشدد کا نشانہ بنایا تھا۔ ایک کم عمر مسلمان لڑکے جنید پر چاقو سے وار کیے گئے تھے جبکہ دو دیگر شدید زخمی ہو گئے تھے۔

یہ جھگڑا ریل گاڑی میں بیٹھنے کے لیے ایک سیٹ سے شروع ہوا تھا لیکن جلد ہی ایک ہجوم نے مسلمان مسافروں کو ’’گائے کا گوشت کھانے والے‘‘ کہہ کر پیٹنا شروع کر دیا تھا۔ واضح ہو کے کچھ ہندو گائے کو مذہبی طور پر مقدس سمجھتے ہیں اور ملک کی متعدد ریاستوں میں اس جانور کو ذبح کرنے پر بھی پابندی عائد ہے، جب کہ کچھ ریاستوں میں تو یہ باقاعدہ جرم ہے، جس کی سزا عمر قید ہے۔
ملک میں ایسے کئی ہندو گروپ بن چکے ہیں، جو قانون سے ماورا ہو کر اپنے طور پر اس بات کو یقینی بنانے کی کوشش میں ہیں کہ کسی گائے کو ذبح نہ کیا جائے۔ ایسے گروپوں میں شامل افراد مختلف ٹیموں کی شکل میں اپنی ’چھاپہ مار کارروائی‘ کرتے ہیں اور اگر ان کے مطابق کوئی شخص کسی گائے کو ذبح کرنے کی کوشش میں ہو، تو وہ خود ہی ماورائے عدالت ایکشن بھی لے لیتے ہیں۔
ناقدین کا کہنا ہے کہ سن دو ہزار چودہ میں نریندر مودی کے اقتدار میں آنے کے بعد سے ایسے ہندو گروپوں کے حوصلے بلند ہوئے ہیں۔ انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والی تنظیموں کے مطابق حکومت مسلمانوں کی حفاظت کے لیے اور قانون ہاتھ میں لینے والے ہندو انتہاپسندوں کے خلاف اقدامات کرنے میں ناکام ہو چکی ہے۔

Leave a Reply

You have to agree to the comment policy.

Ad
Ad
Ad
Ad
Ad

SPORTS

Karun, Axar star in India A’s 7-wkt win over Afghanistan A

India-A comfortably beat Afghanistan-A by seven wickets to register their first-win in the tri-nation 'A' tour ...

Sri Lanka turn down PCB’s invitation to play T20 in Pakistan

The Sri Lankan cricket board has turned down an invitation from the Pakistan Cricket Board to send its team to ...

Ad

Archive

July 2017
M T W T F S S
« Jun    
 12
3456789
10111213141516
17181920212223
24252627282930
31  

OPEN HOUSE

Mallya case: India gives fresh set of documents to UK

AMN India has given a fresh set of papers to the UK in the extradition case of businessman Vijay Mallya. Ex ...

@Powered By: Logicsart