इंडियन आवाज़     22 Apr 2018 02:27:30      انڈین آواز

ٹرمپ کی سفری پابندی سے امريکی کمپنياں پریشان

امريکی سياحت کی صنعت کو آئندہ تين تا پانچ برسوں ميں اس کا خميازہ بھگتنا پڑے گا۔ رپورٹ

AMN

امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی سفری پابندی سے امریکا کی معاشی حالات پر منفی اثر پڑنا شرو ہو گیا ہے. امریکا میں سياحت سے متعلق کمپنيوں کو خدشہ ہے کہ انتظاميہ کی جانب سے اٹھائے جانے والے اقدامات سے يہ صنعت منفی طور پر متاثر ہو رہی ہے ۔ ان کمپنيوں نے مسلمان ممالک سے سفر کرنے والوں پر پابندی کو بھی تنقيد کا نشانہ بنايا ہے۔
صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی رواں سال جنوری ميں چند مسلم ممالک سے امريکا سفر کرنے والوں پر خلاف پابندی کو عدليہ کی جانب سے رد کر ديے جانے کے باوجود پچھلے چند مہينوں ميں امريکی سياحت کی صنعت منفی طور پر متاثر ہوئی ہے۔ اپريل ميں اس صنعت ميں ترقی کی رفتار پچھلے چھ مہينوں کے مقابلے ميں کم رہی۔ يہ انکشاف ’آکسفورڈ اکنامکس‘ کے اشتراک سے امريکی ٹريول ايسوسی ايشن کے حال ہی میں شائع کردہ اعداد و شمار ميں کيا گيا ہے۔ اعداد و شمار پر مبنی رپورٹ ميں مزيد لکھا ہے، ’’مستقبل ميں بھی امريکی ڈالر کی قدر، غير مستحکم عالمی معيشت اور موجودہ ملکی سياسی ماحول کے عناصر بين الاقوامی اور داخلی سفر کو منفی طور پر متاثر کر سکتے ہيں۔‘‘

ری پبلکن پارٹی کے ڈونلڈ ٹرمپ نے رواں سال جنوری ميں عہدہ صدارت سنبھالنے کے بعد ايک حکم نامہ جاری کرتے ہوئے چند مسلمان رياستوں کے شہريوں اور پناہ گزينوں کے امريکا سفر پر عارضی پابندی عائد کر دی تھی۔ تاہم ايک عدالت نے اسے نا اہل قرار دے ديا تھا۔ بعد ازاں ابتدائی حکم نامے ميں معمولی ترميم کے ساتھ صدر ٹرمپ نے ايک دوسرا حکم نامہ جاری کيا، جس ميں چھ مسلم ممالک کے شہريوں پر دوبارہ ايسی پابندی عائد کی گئی تاہم يہ پيش رفت بھی اس وقت عدالت ميں زير بحث ہے۔
امريکا ميں سياحت کی صنعت سے وابسہ افراد ٹرمپ کے ’امريکا پہلے‘ کے منشور کو ممکنہ سياحوں کے ليے خطرہ قرار ديتے ہيں۔ ملکی ٹريول ايسوسی ايشن کے چيف ايگزيکيٹو روجر ڈو نے اس بارے ميں بات کرتے ہوئے ايک پريس کانفرنس ميں کہا، ’’ہميں ٹرمپ انتظاميہ کی پاليسيوں کا جائزہ لينا پڑے گا۔ بہت سے سياح اب يہ سوچتے ہوں گے کہ آيا امريکا ہميں خوش آمديد کہتا ہے؟‘‘ ان کے بقول امريکی سياحت کی صنعت کو آئندہ تين تا پانچ برسوں ميں اس کا خميازہ بھگتنا پڑے گا۔

گزشتہ سال امريکا ميں سياحت کی صنعت کی ماليت تقريباً ايک ٹريلين ڈالر تھی۔ اس وقت عالمی سطح پر اس صنعت ميں ترقی ديکھی جا رہی ہے ليکن موجودہ امريکی پاليسياں امريکا کے ليے آنے والے سالوں ميں منفی ثابت ہو سکتی ہيں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

QAUMI AWAAZ

Justice Rajinder Sachar is no more

  AMN / NEW DELHI Well know legal luminary, human righ activist and former Chief Justice of the Delhi ...

“Sabka Saath, Sabka Vikas” is not mere a slogan, says Naqvi

Our Correspondent / Rampur Union Minority Affairs Minister Mukhtar Abbas Naqvi today said that “Sabka Saath ...

Supreme Court judgment recognises powers of NCMEI

Our Correspondent / NEW DELHI The Supreme Court has ruled that the National Commission for Minority Education ...

SPORTS

TTFI recommends CWG medalist Manika Batra’s name for Arjuna Award

The Table Tennis Federation of India (TTFI) has recommended Manika Batra, the country's only quadruple medalli ...

Bengaluru FC wins Super Cup Football tournament

Bengaluru FC have won the inaugural edition of Super Cup Football tournament.=In the final at the Kalinga Stad ...

CWG 2018: Shuttlers continue India’s medal rush in Gold Coast

Gold Coast India's badminton players continued their fine run here on Sunday with Saina Nehwal and Kidambi ...

@Powered By: Logicsart