FreeCurrencyRates.com

इंडियन आवाज़     28 May 2017 08:12:40      انڈین آواز

مسلمانوں نے ہی امبیڈکر کو آئین ساز اسمبلی میں پہنچایا تھا

ڈاکٹر امبیڈکر کی 126ویں سالگرہ پر جلسہ

فرقہ پرستوں کے منصوبوں کو ناکام بنانے کے لئے دلت اور مسلم اتحاد وقت کی اہم ضرورت: جسٹس صدیقی

نئی دہلی: ملک کے موجودہ سیاسی حالات سے مایوس اور دلبرداشتہ نہ ہونے کا درس دیتے ہوئے نیشنل کمیشن فار مائنارٹی انسٹی ٹیوشنز کے سابق چیئر مین جسٹس ایم ایس اے صدیقی نے کہا کہ دلت اور کمزور طبقات سے اتحاد کرنا وقت کی عین ضرورت ہے۔ فرقہ پرست طاقتوں کے عروج کے پس منظر میں ” جتنا ہم مضبوط ہوں گے اتنا وہ مجبور ہوں گے “ کا نعرہ دیتے ہوئے جسٹس صدیقی نے کہا کہ ملک کی منجملہ آبادی میں دلت 23فی صد ہیں اور مسلمان بھی 23فی صد ۔ اگریہ دونوں مل جائیں تو46فی صد آبادی ایک بڑی مضبوط سیاسی قوت بن سکتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اب مسلمانوں کو اپنے ایجنڈے پر ہی کام کرنا چاہیے

دستور ہند کے خالق اور کمزور طبقات کے مسیحا ڈاکٹر بابا صاحب بھیم راﺅ امبیڈکر کے126یوم پیدائش کے موقع پر آل انڈیا کنفیڈریشن فار سوشل جسٹس کے زیر اہتمام آج یہاں ایوان غالب میں منعقدہ ایک جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے جسٹس صدیقی نے کہا کہ ڈاکٹر امبیڈکر کے نہ صرف دلتوں اور کمزور طبقات بلکہ مسلمانوں پر بھی بڑے احسانات ہیں۔جنہوں نے ایک ایسا دستور مدون کیا جس میں مذہبی اور لسانی اقلیتوں کے تعلیمی حقوق کو بنیادی حقوق کا درجہ دیا گیا۔ جب آئین ساز اسمبلی میں بحث کے دوران میں ’ اقلیت ‘کی جگہ پر ’ہر شہری‘ کی اصطلاح پر زور دیا جارہا تھا تو امبیڈکر نے اس کی سخت مخالفت اور مزاحمت کی تھی۔ آئین کی دفعہ 30کے تحت مذہبی اقلیتوں کو اپنے تعلیمی ادارے قائم کرنے اور چلانے کی پوری آزادی فراہم کی گئی نیز مادری زبان میں تعلیم اور مذہب و عقیدے و ثقافت پر چلنے اور اسکی تبلیغ کی آزادی دفعات25اور 26میں عطا کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کے ایک فیصلہ کے نتیجہ میں حکومت کو ’ بدعنوانی‘ کی صورت میں اقلیتی تعلیمی ادارے میں کچھ مداخلت کا موقع ملا ہے ۔

ambedkar justice siddiqui

موجودہ حالات کا تجزیہ کرتے ہوئے جسٹس صدیقی نے کہا کہ ہمیں دل سے نہیں دماغ سے کام لینے کی ضرورت ہے۔ نیز کسی اور کے ایجنڈے پر نہیں بلکہ اپنے ایجنڈے پر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج بھی ملک میں چھو ا چھات باقی ہے اور دلتوں کے ساتھ نا انصافیاں ہو رہی ہیں اور ملت کا بھی حال برا ہے لیکن کوئی رہنما اس پر بولنے کی ہمت نہیں کر رہا ہے ۔ اس آگ کو دہکانا چاہیے کیونکہ شعلہ کی خاصیت بلندی ہوتی ہے اور آنسوﺅں کی خاصیت پستی ۔ انہوں نے دلتوں سے رشتے استوا ر کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اسلام نے مساوات کی جو آفاقی تعلیم دی ہے اسے ہم اپنائیں ۔ اس موقع پر انہوں نے اس کے لئے ایک لائحہ عمل کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ دلت طلبا کو اسکالرشپ دی جائے گی ۔ اور قریہ قریہ دلت مسلم اتحاد کی مشعل روشن کی جائے گی۔

اس موقع پر جسٹس صدیقی سمیت متعدد مقررین نے اس تاریخی حقیقت کو بھی اجاگر کیا کہ ڈاکٹر امبیڈکر کو آئین سازاسمبلی میں بھیجنے والے مسلمان ہی تھے۔ کیونکہ ان کی آئین اسمبلی ساز میں دوبار پہنچنے کی کوششوں کو اعلی ذات کے ہندوﺅں نے ناکام بنادیا تھا۔قائد اعظم محمد علی جناح کی ایماءپر بنگال سے مسلم لیگ کے ایک ممبر نے اپنی نشست امبیڈکر کے لئے خالی کردی تھی جس پر وہ آئین ساز اسمبلی کے لئے منتخب ہوئے۔ اگر مسلمان امبیڈکر کو آئین ساز اسمبلی میں نہیں بھیجتے تو آج یہ دستور بھی نہیں ہوتا۔ ان کے بارے فرقہ پرست قوتیں یہ غلط فہمی پھیلاتی ہیں کہ وہ مسلمانوں کے مخالفت تھے وہ سراسر ایک بہتان اور سفید جھوٹ ہے۔
تعلیمی میدان کی نامور شخصیت پی اے انعامدار نے کہا کہ فرقہ پرستوں کے بد امنی اور غلط فہمیاں پھیلانے کے منصوبوں کو ناکام امبیڈکر ، جیوتی باپھلے اور شیواجی کے یوم پیدائش پر جلسے جلوس نکال کر کیا جاسکتا ہے ۔ اس موقع پر انہوں نے پونا میں چلا رہے انکے تعلیمی اداروں کی طرف سے نکالے گئے جلوس کی ایک ویڈیو بھی میں دکھائی۔

مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے سابق پرو وائس چانسلر خواجہ شاہد نے کہاکہ امبیڈکر کو اپنی زندگی میں جن غیر انسانی امیتازات کا سامنا کرنا پڑا اس کا درد آئین میں جھلکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ امبیڈکر نے 19نومبر1949کو آئین ساز اسمبلی میں اپنی آخری تقریر میں جن تین خطرات کا تذکرہ کیا تھا وہ سب صحیح ثابت ہو ئے ہیں۔ انہوں نے خبردار کیا تھا کہ اپنے مطالبہ کو غیر آئینی طریقہ سے نہ منوایاجائے، لیڈروں کو بھگوان کا درجہ نہ دیا جائے اور سماجی جمہوریت کو سیاسی جمہوریت میں تبدیل نہ کیا جائے ۔ امبیڈکر نے گاندھی جی کی طرف سے دلتوں کے لئے ’ ہریجن ‘ کی اصطلاح کی بھی سخت مخالفت کی تھی۔ امبیڈکر بڑے دور اندیش تھے یہی وجہ ہے انہوں نے سرکار کی طرف سے مذہبی تعلیم فراہم کرنے کی مخالفت کی تھی اور آج آپ دیکھ رہے ہیں کہ حکومتیں ایک مخصوص مذہب کی تعلیم کوچور دروازے سے مسلط کرنے کی کوشش کر رہی ہیں۔

جلسہ میں ڈاکٹر امبیڈکر کو زبردست خراج تحسین پیش کیا گیا۔ آل انڈیا کنفیڈریشن فار ویمن امپاورمنٹ تھرو ایجوکیشن کی صدر ڈاکٹر شبستان غفار نے جنہوں نے نظامت کے فرائض بھی انجام دیئے ، کہا کہ اس جلسہ کے انعقاد کا مقصد دلت اور مسلمانوں میں اتحاد کی راہیں ہموار کرنا ہے۔ اس طرح کے جلسے اور پروگرام ملک بھر میں منعقد کئے جائیں گے۔ جلسہ سے متعدد دلت رہنماﺅں ہیمراج بنسل، آر کے نارائن ، کنور سنگھ ، ہری بھاردواج کے علاوہ سراج الدین قریشی، مولانا ساجد رشیدی، انجنیئر محمد اسلم ، اور چودھری عباس علی نے بھی خطاب کیا۔

Ad
Ad
Ad
Ad

SPORTS

Team India arrive in England for Champions Trophy

Team India, led by Virat Kohli, arrived in England today ahead of their title defence of the ICC Champions Tro ...

ICC Cricket Committee recommends DRS for T20 Internationals

The ICC Cricket Committee chaired by India's head coach Anil Kumble has made a host of recommendations at its ...

Ad

Archive

May 2017
M T W T F S S
« Apr    
1234567
891011121314
15161718192021
22232425262728
293031  

OPEN HOUSE

NEPAL TRAGEDY: PHOTO FEATURE

[caption id="attachment_30524" align="alignleft" width="482"] The death toll from Saturday's deadly 7.9 magnit ...

@Powered By: Logicsart