FreeCurrencyRates.com

इंडियन आवाज़     29 Jul 2017 05:12:43      انڈین آواز

“لیبرل ہندو کی خاموشی سے حالات بد سے بدتر ہوتے جارہے ہیں”

مسلمانوں کے سبھی طبقوں کو ایک ساتھ چلنےضرورت : فرح نقوی

AMN

پٹنہ: مسلمان جب تک اس ملک میں اپنا سیاسی و تعلیمی ایجنڈا طئے نہیں کرینگے اس وقت تک انکے حالات میں کوئی تبدیلی نہیں ہونے والی ہے۔ آزادی ملنے کے بعد جب ائین سازی کا کام ہو رہا تھا تو اس وقت ہماری لیڈر شپ نے محض ایمان کی حفاظت کی بات کی اور لیبرل ہندو کا ساتھ دیا اسکے برعکس انہوں نے نہ کسی سیاسی حقوق پر بات کی اور نہ کسی اور ترقی پر ہی انکی نظر تھی نتیجہ یہ ہو ا ہے آزادی کے ۰۷ سالوں کے بعد لیبرل ڈیموکریسی نے میجوٹرین ڈیمو کریسی کی شکل اختیار کرلی جو نہ صرف مسلمان بلکہ اس پورے ہندوستان کیلئے خطرہ ہے ۔ ان خیالات کا اظہار بہار کلکٹیو کے بینر تلے گفتگو “ہندوستانی مسلمان : نئے حالات، نئی منزلیں “کے موضوع پر معروف صحافی اور سماجی کارکن فرح نقوی نے کیا۔انہوں نے گفتگو کا اغاز اس انداز میں کیا کہ نارتھ انڈیا میں بہار ایک ایسی جگہ ہے جہاں جمہوریت اور رائے اظہار کی آزادی حاصل ہے ۔جبکہ نارتھ انڈیا کی دوسری ریاستوں میں اظہار آزادی پر پابندی ہے حد تو یہ ہمارے طلباءاور یونیورسیٹیوں میں مزاحمتی آواز کو روکنے کیلئے سرکار بہت سخت ہوتی جارہی ہے۔ ٹھیک اسی طرح سے اس ملک میں مسلمانوں کیلئے راہیں تنگ کی جارہی ہیں ۔ جس ملک میں گائے کے بدلے انسان کی جان کو کچھ نہ سمجھا جائے ویسے ملک کا کچھ بھی نہیں کیا جا سکتا۔ جبکہ اس ملک کی آزادی میں مسلمانوں نے بھی اپنے خون بہائے ہیں اپنے لوگون ی قربانیاں پیش کی ہیں ۔
اب مسلمانوں پر سیدھے حملے کئے جارہے ہیں۔

FARAH NAQVIمسلمانوں کے حالات زار پر انہوں نے کہا کہ مسلمانوں نے اب تک کوئی ایجنڈا طئے نہیں کیا ۔ حکومت کے سامنے طلاق، یکساں سول کوڈ، مذہبی حقوق پر باتیں ہوتی ہیں اس کی جگہ تعلیم، صحت اور دوسرے ایجنڈے بھی طئے کئے جانے چاہیئے ۔

انہوں نے یہودی قوم کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ کس طرح سے انہوں نے سخت نامساعد حالات میں بھی اپنی قوم کو مذہب کے ساتھ ساتھ تعلیم اور سائنس سے جوڑا آج اسکی وجہ یہ ہے کہ وہ قوم دنیا کے کامیاب ترین قوم میں شمار کی جاتی ہے ہم نے اپنے مذہب کو ہی سب کچھ سمجھ لیا ہے جبکہ اس کے علاوہ بھی ہمارے ترجیحات ہونے چاہیئے۔ آج ملک میں جس طرح سے لیبرل ڈیموکریسی کا تانا بانا ٹوٹ رہا اور اسکے اثرات یہ ہورہے ہیں ایک خاص طبقہ پوری طرح سے گولبند ہورہا ہے اور ایسے میں ہمارے لیبرل ہندو کی خاموشی سے حالات بد سے بدتر ہوتے جارہے ہیں

انہوں نے مسلمانوں کے سبھی طبقوں کو ایک ساتھ چلنے کی اپیل کی اور مستقبل میں اپنا سیاسی اور تعلیمی ایجنڈا طئے کرنے کا مشور ہ دیا ۔ آج ان کی وجہ سے قوم ہر محاذ پر پسماندہ ہوتی جارہی ہے ۔ انہوں نے مسلم لیڈر شپ کیلئے علماءکے رول پر سوالیہ نشان لگاتے ہوئے کہا کہ ان کو مذہبی امور تک اپنے اپنے آپ کو محدود رکھنا چاہیئے اور مسلمانوں کی قیادت کیلئے دانشور طبقوں کو آگے آنا چاہیئے اور مضبوط لائحہ عمل کے ساتھ سیاسی و تعلیمی حقوق کیلئے کوشاں ہونا چاہیئے ۔ گفتگو کے آغاز سے پہلے سیدشہاب الدین مرحوم کو تمام حاضرین نے کھڑے ہوکر خراج عقیدت پیش کی ۔ اس گفتگو میں تقریبا ۰۵۲ سے ۰۰۳ چیدہ چیدہ شخصیات موجود تھیں گفتگو کے اختتام پر سامعین حضرات کے سوالات کا بھی فرح نقوی نے کافی مدلل طریقے سے جواب دیا

Leave a Reply

You have to agree to the comment policy.

Ad
Ad
Ad
Ad
Ad

SPORTS

Karun, Axar star in India A’s 7-wkt win over Afghanistan A

India-A comfortably beat Afghanistan-A by seven wickets to register their first-win in the tri-nation 'A' tour ...

Sri Lanka turn down PCB’s invitation to play T20 in Pakistan

The Sri Lankan cricket board has turned down an invitation from the Pakistan Cricket Board to send its team to ...

Ad

Archive

July 2017
M T W T F S S
« Jun    
 12
3456789
10111213141516
17181920212223
24252627282930
31  

OPEN HOUSE

Mallya case: India gives fresh set of documents to UK

AMN India has given a fresh set of papers to the UK in the extradition case of businessman Vijay Mallya. Ex ...

@Powered By: Logicsart