FreeCurrencyRates.com

इंडियन आवाज़     20 Mar 2019 04:20:27      انڈین آواز
Ad

سپریم کورٹ کا فیصلہ: باہمی رضامندی سے ہم جنس پرستی جرم نہیں

SC
سپریم کورٹ کی پانچ ججوں کی بینچ نے ہم جنس پرستی کو جرم کے زمرے سے باہر کر دیا ہے۔

سپریم کورٹ کی پانچ ججوں کی بینچ نے ہم جنس پرستی کو جرم کے زمرے سے باہر کر دیا ہے۔ سیکشن 377 پر فیصلہ سناتے ہوئے چیف جسٹس دیپک مشرا نے کہا کہ سماجی اخلاقیات کی آڑ میں دوسروں کے حقوق کی خلاف ورزی کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔ سپریم کورٹ نے اپنے فیصلہ میں کہا ہے کہ دو بالغ افراد کے درمیان باہمی رضامندی سے بنائے گئے تعلق کو جرم کے زمرے میں نہیں رکھا جا سکتا۔ اس معاملہ میں چیف جسٹس کے علاوہ جسٹس روهنگٹن ایف نریمن، جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ اور جسٹس اندو ملہوترا نے الگ -الگ لیکن رضامندی کا فیصلہ سنایا۔ یہ عرضیاں نوتیج جوهار اور دیگر نے دائر کی تھیں۔ ان درخواستوں میں دفعہ 377 کو چیلنج کیا گیا تھا۔

چیف جسٹس آف انڈیا دیپک مشرا کی صدارت والی پانچ ججوں کی آئینی بینچ نے ہم جنس پرستوں کے حقوق کے کارکنوں سمیت مختلف فریقوں کو سننے کے بعد 17 جولائی کو اپنا فیصلہ محفوظ رکھ لیا تھا۔

دفعہ 377 پر فیصلہ سناتے ہوئے چیف جسٹس دیپک مشرا نے کہا کہ ” ہمیں ایک دوسرے کے حقوق کا احترام کرنا چاہئے اور انسانیت دکھانی چاہئے اور یہ بھی کہا کہ پرانے خیال کو بدلنے کی ضرورت ہے۔ سماج کی سوچ کو بدلنے کی ضرورت ہے”۔

چیف جسٹس دیپک مشرا نے کہا کہ ہم جنس پرستوں کو برابر کے حقوق ملنے چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم جنس پرستوں کو عزت کے ساتھ جینے کا حق ہے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ پرانا حکم صحیح نہیں

تھا۔ وقت کے ساتھ قانون کو بدلنا چاہئے۔

راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) نے کہا ہے کہ ہم جنس پرستی جرم نہیں هونے کے باوجود غیر فطری عمل ہے اور سنگھ ایسے تعلقات کو فروغ نہیں دیتا ہے۔

ہم جنس پرستی پر سپریم کورٹ کے فیصلے کے بارے میں پوچھے جانے پرآر ایس ایس کے آل انڈيا پرچارک ارون کماراسے غیر فطری عمل بتایا۔

ہم جنس پرستی جرم تو نہیں مگرغیر فطری عمل، ہم اس طرح کے تعلقات کو فروغ نہیں دیتے: آرایس ایس
آرایس ایس کارکنان ٹریننگ کے دوران: فائل فوٹو

انہوں نے صحافیوں کو بتایا کہ “سپریم کورٹ کی طرح ہم بھی ایسے تعلقات کو جرم نہیں سمجھتے ہیں۔ تاہم ہم جنس پرستی اوران کے تعلقات فطری نہیں ہیں اورنہ ہی ہم اس قسم کے تعلقات کو فروغ دیتے ہیں”۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے آج ہی دو بالغوں کے درمیان باہمی رضامندی سے ہم جنس پرستی کے تعلقات کو جرم کے زمرے سے باہر کر دیا ہے۔ چیف جسٹس دیپک مشرا کی صدارت والی پانچ رکنی آئینی بنچ نے ایک متفقہ فیصلے میں تعزيرات ہند کی دفعہ 377 کو چیلنج کرنے والی درخواستوں کو قبل کرتے ہوئے ہم جنسی پرستی کو جرم کے زمرے سے باہر کردیا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Ad

POLITICS

Mamata Dares PM Modi, Amit Shah to Compete With Her on Chanting Mantras

Accusing the BJP of only playing politics over the Ram Mandir issue, the West Bengal chief minister said her g ...

J&K: Former IAS Shah Faesal launches political party

The new party has been named Jammu and Kashmir Peoples’ Movement and its dominant slogan would be Ab Hawa Ba ...

BJP’s Pramod Sawant to be sworn in as Goa CM today

2 Allies Get Deputy Posts     Panaji Former Speaker of the Goa legislative assembly and BJ ...

SPORTS

India gears up to face Bangladesh in SAFF women football

Biratnagar (Nepal) A confident India is fully geared up to face Bangladesh in the semi final of the SAFF Wo ...

PCB pays over Rs 11 cr as compensation to BCCI after losing case in ICC

  The Pakistan Cricket Board (PCB) has paid 1.6 million US dollars, equivalent to over eleven crores in ...

Gopi Thonakal qualifies for World Athletics Championships

In marathon, India's Asian champion Gopi Thonakal has qualified for the World Athletics Championships to be he ...

Ad

MARQUEE

116-year-old Japanese woman is oldest person in world

  AMN A 116-year-old Japanese woman has been honoured as the world's oldest living person by Guinness ...

Centre approves Metro Rail Project for City of Taj Mahal, Agra

6 Elevated and 7 Underground Stations along 14 KmTaj East Gate corridor 14 Stations all elevated along 15.40 ...

CINEMA /TV/ ART

Priyanka Chopra is among world powerful women

AGENCIES   Bollywood actress Priyanka Chopra Jonas has joined international celebrities including Opr ...

Documentary on Menstruation stigma ‘Period’ wins Oscar

  WEB DESK A Netflix documentary Period. End of sentence, on the menstruation taboo in rural India has ...

Ad

@Powered By: Logicsart