FreeCurrencyRates.com

इंडियन आवाज़     18 Jan 2019 03:26:58      انڈین آواز
Ad

بابری مسجد ملکیت مقدمہ – اگلی سماعت 29؍جنوری کو

پانچ رکنی بینچ سے جسٹس یویوللت الگ
پانچ رکنی بینچ سے سماعت کرانے کے فیصلہ کا خیر مقدم کرتا ہوں: مولانا ارشدمدنی


نئی دہلی

سپریم کورٹ نے بابری مسجد ملکیت مقدمہ کی سماعت آئندہ 29؍جنوری تک کے لئے ملتوی کردی ، آج جب سپریم کورٹ کی پانچ رکنی بینچ کے سامنے یہ مقدمہ پیش ہوا تو جمعیۃ علماء ہند کے لیڈ میٹر سول سماعت پیٹیشن نمبر 10866- 10867/2010 (ایچ محمد صدیق جنرل سیکریٹری جمعیۃ علماء اترپردیش)میں پیروی کیلئے سینئر ایڈوکیٹ ڈاکٹر راجیودھون، سینئر ایڈوکیٹ راجورام چندرن ،سینئر ایڈوکیٹ ورنداگرور اور ایڈوکیٹ آن ریکارڈاعجازمقبول ودیگر وکلاء پیش ہوئے،ڈاکٹر رجیودھون نے سب سے پہلے عدالت میں 20/11/1997 کا ایک حکم نامہ پیش کرتے ہوئے عدالت کو مطلع کیا کہ بینچ میں شامل جسٹس یویوللت ایک مقدمہ (بابری مسجد کی شہادت )میں اترپردیش کے سابق وزیراعلیٰ کلیان سنگھ کے وکیل رہ چکے ہیں ، انہوں نے کہا کہ یہ میری ذمہ داری تھی کہ یہ بات میں عدالت کے علم میں لاؤں ، لیکن اگر جسٹس یویوللت مقدمہ کی سماعت کرتے ہیں تو ہمیں اس پر کوئی اعتراض نہیں ، یہ بات اب ان کی صوابدید پر ہے کہ آیا وہ مقدمہ کی سماعت کریں گے یا نہیں ، اس پر چیف جسٹس نے یہ بتایا کہ جسٹس یویو للت نے یہ ظاہر کیا ہے کہ وہ اس میٹرکو نہیں سننا چاہتے، بعدازاں ڈاکٹر راجیودھون نے عدالت سے کہا کہ اس سے پہلے سابق چیف جسٹس کی سربراہی والی تین رکنی بینچ نے ہماری گزارش پر اس مقدمہ کو کسی وسیع تربینچ کے حوالہ کرنے سے منع کردیا تھا ،انہوں نے کہا کہ وہ عدالت میں یہ بات حفظ ماتقدم کے طورپر کہہ رہے ہیں اور بہتر ہوگا کہ اس تعلق سے ایک جوڈیشل آڈربھی پاس کردیا جائے اس پر چیف جسٹس رنجن گگوئی نے کہا کہ چیف جسٹس کو یہ اختیارحاصل ہے کہ وہ کسی معاملہ کو کسی بھی نمبر آف بینچ کے حوالہ کرسکتا ہے ، چیف جسٹس نے یہ بھی کہاکہ بینچ میں پانچویں جج کی شمولیت کے بعدآئندہ 29؍جنوری کو مقدمہ کی آئندہ سماعت کا لائحہ عمل طے ہوگا ، مقدمہ کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مقدمہ سے جڑے شواہد وثبوت ہزاروں صفحات پر مشتمل ہے اور ہائی کورٹ کا فیصلہ بھی چارہزار صفحات پر پرنٹ کی شکل میں اور آٹھ ہزار سے زائد ٹائپ شدہ صفحات کی شکل میں موجودہیں اور ہائی کورٹ کا ریکارڈ بھی جو کئی زبانوں میں ہیں ریکارڈ روم میں کئی ٹرنکوں میں ہے ، اب سپریم کورٹ کی رجسٹری یہ طے کریگی کہ ان کا مناسب طریقہ سے ترجمہ ہوا ہے یا نہیں ، اس پر فریق مخالف کے وکیل مسٹر ہریش سالوے نے کہا کہ ترجمہ کاکام پہلے ہی مکمل ہوچکا ہے ،انہوں نے یہ بھی کہا کہ اس سلسلہ میں وکلاء رجسٹری کی مددکرسکتے ہیں ، ان کی اس پیش کش کو بینچ نے خارج کردیا اور کہا کہ رجسٹری ازخود یہ کام انجام دیگی ،۔
جمعیۃعلماء ہند کے صدرمولانا سید ارشدمدنی نے آج کی پیش رفت پر اپنی مسرت کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ ہم ابتدائی ہی سے اس حق میں ہیں کہ مقدمہ کی نوعیت اور حساسیت کو دیکھتے ہوئے کوئی بڑی بینچ اس کی سماعت کرے ، ہمارے وکلاء اس سلسلہ میں عدالت سے بارہادرخواستیں بھی کرتے رہے ہیں ، مگر تب عدالت نے ہماری اس درخواست کو مستردکردیا تھا ، انہوں نے کہا کہ ہمیں اس بات کی بے حدخوشی ہے کہ اب اس مقدمہ کی سماعت ایک پانچ رکنی آئینی بینچ کریگی ، مولانا مدنی نے کہا کہ آج جس طرح ہمارے وکلاء نے بینچ میں شامل جسٹس للت کا معاملہ اٹھایا وہ یہ ظاہر کرتاہے کہ ہمارے وکلاء عدالت میں پوری تیاری کے ساتھ جاتے ہیں اور مقدمہ کی ہر پہلوپر ان کی پینی نظرہوتی ہے ، جمعیۃعلماء ہند اپنا موقف پہلے ہی صاف کرچکی ہے کہ وہ قانون کے مطابق جو بھی فیصلہ آئے گا اس کا احترام کریگی ، اور میرا بھی یہی موقف ہے اس لئے کہ حکومتیں قانون سے ہی چلتی ہیں اور اگر قانون کا احترام نہیں ہوگا تو حکومت خواہ کتنے ہی مضبوط اور طاقتورکیوں نہ ہوانتشار اور تباہی کا شکار ہوسکتی ہے ، انہوں نے یہ بھی کہا کہ پانچ رکنی بینچ کے حوالہ سے چیف جسٹس نے جو کچھ کہا ہے اس سے یہ بات پھر صاف ہوگئی کہ عدالت اپنا فیصلہ دینے سے قبل ان تمام اہم کاغذات کا جو ثبوت وشواہد کی شکل میں ہیں بڑی باریک بینی سے مطالعہ کرنا چاہتی ہے تاکہ کوئی پہلومخفی نہ رہ سکے یہ ایک خوش آئند بات ہے ، مولانا مدنی نے آخرمیں کہا کہ میں پانچ رکنی بینچ کی تشکیل کا خیر مقدم کرتا ہوں ۔
واضح رہے کہ جمعیۃعلماء ہند کی جانب سے آج عدالت میں سینئر ایڈوکیٹ ڈاکٹر راجیودھون، سینئر ایڈوکیٹ راجورام چندرن ، سینئر ایڈوکیٹ ورندراگرور اور ان کی معاونت کے لیئے ایڈوکیٹ آن ریکارڈ اعجاز مقبول، ایڈوکیٹ شاہد ندیم، ایڈوکیٹ جارج، ایڈوکیٹ تانیا شری، ایڈوکیٹ اکرتی چوبے ، ایڈوکیٹ قرۃ العین، ایڈوکیٹ واصف رحمن خان،ایڈوکیٹ مجاہد احمد، ایڈوکیٹ زین مقبول، ایڈوکیٹ ایوانی مقبول،ایڈوکیٹ کنور ادتیہ، ایڈوکیٹ ہمسینی شنکر، ایڈوکیٹ پریانشی جیسوال و دیگر موجود تھے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Ad
Ad

SPORTS

Maharashtra sweep all four gold medals in Kho-Kho; Haryana in three Kabaddi final at KIYG

  HSB / Pune On a day when there were only gold medals at stake, hosts Maharashtra made a clean s ...

Saina, Kidambi progress to quarterfinal of Malaysia Master

  Top Indian shuttlers Saina Nehwal and Kidambi Srikanth progressed to the quarterfinal of the Mal ...

Khelo India: Jharkhand stuns Odisha to set up Girls U-17 hockey title clash with Haryana

Harpal Singh Bedi / Pune “It is not over till it is over” Jharkhand proved this adage as after trailing 0 ...

Ad

MARQUEE

Major buildings in India go blue as part of UNICEF’s campaign on World Children’s Day

Our Correspondent / New Delhi Several monuments across India turned blue today Nov 20 – the World Children ...

US school students discuss ways to gun control

             Students  discuss strategies on legislation, communities, schools, and mental health and ...

CINEMA /TV/ ART

Noted Film actor Kader Khan passes away in Canada

Born in Kabul, Khan made his acting debut in 1973 with Rajesh Khanna's "Daag" and has featured in over 300 fil ...

Mortal remains of Mrinal Sen cremated in Kolkata

    Mortal remains of Legendary filmmaker Mrinal Sen, the last of the triumvirate of directi ...

Ad

@Powered By: Logicsart