FreeCurrencyRates.com

इंडियन आवाज़     22 Jan 2019 05:45:13      انڈین آواز
Ad

’’اسلامی دہشت گردی‘‘ کورس کے بارے میں جے این یو کا جواب

JNU

نئی دہلی : دہلی اقلیتی کمیشن کے نوٹس کے جواب میں جے این یو کے رجسٹرار ڈاکٹر پرمودکمار نے بتایا ہے کہ جے این یو کی اکیڈمک کاؤنسل میں ’’اسلامی دہشت گردی‘‘ کے کورس کے بارے میں کوئی تجویز نہیں رکھی گئی ہے۔ساتھ ہی انہوں نے مجوزہ سینٹر فار نیشنل سیکیورٹی اسٹڈیز کے بارے میں تصوراتی ورقہ (کانسپٹ پیپر ) کی کاپی بھی منسلک کی ہے۔ انہوں نے کمیشن کے سوال کے جواب میں بتایا ہے کہ جے این یو کو اس کی کوئی اطلاع نہیں ہے کہ ’’ اسلامی دہشت گردی‘‘ کے بارے میں کوئی کورس کسی ہندوستانی یا بیرون ملک یونیورسٹی میں پڑھایا جاتا ہے۔رجسٹرار نے اپنے جواب میں یہ بھی بتایا کہ تصوراتی ورقے کے بارے میں جو تبصرے اکیڈمک کاؤنسل کے ممبران کی طرف سے موصول ہوئے ہیں ان پر غور کرنے کے لئے یونیورسٹی نے ایک کمیٹی کی تشکیل کی ہے۔ رجسٹرار نے اپنے جواب کے ساتھ مجوزہ سنٹر کے سلسلے ہونے والی اکیڈمک کاؤنسل کی میٹنگ کی روداد کی کاپی بھی بھیجی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ یونیورسٹی کے دوسرے شعبوں اور سنٹروں میں پڑھائے جانے والے مواد مجوزہ سنٹر میں نہ پڑھائے جائیں تاکہ تکرار (اورلیپنگ) نہ ہو اور اگر کسی ممبر کو تصوراتی ورقے کے بارے میں کوئی تجویز دینی ہو تو وہ رجسٹرارکو دے دے تاکہ اسے مجوزہ کمیٹی کے پاس بھیجا جاسکے۔مجوزہ کمیٹی کو اکیڈمک کاؤنسل کی یکم دسمبر ۲۰۱۷ کی میٹنگ میں تشکیل دیا گیا تھا۔ کمیٹی نے کئی میٹنگیں منعقد کیں اور بالآخر یکم مئی ۲۰۱۸ کی میٹنگ میں مذکورہ تصوراتی ورقے کو پاس کیا۔

رجسٹرا رجے این یو کی یقین دہانی کے برعکس، تصوراتی ورقے کے مطابق مجوزہ سنٹر جن بنیادی میادین (Key areas) پر ریسرچ کرے گا اور بالآخر ان کو کو رس میں داخل کرے گا، ان میں ’’اسلامی دہشت گردی‘‘ (Islamic Terrorism) شامل ہے۔ کمیشن نے جے این یو کو مطلع کیا ہے کہ اگرچہ مجوزہ سنٹر ایک اچھی شروعات ہے اور ملک کو اس کی ضرورت ہے مگر ’’اسلامی دہشت گردی‘ ‘ کو اس سنٹر کے مضامین میں ریسرچ اور ٹیچنگ کے لئے داخل کرنا ایک کج فہمی کا نتیجہ ہے کیونکہ نہ صرف یہ ایک سیاست زدہ موضوع ہے بلکہ اس سے کیمپس کے اندر اور باہر فرقہ وارانہ فضا خراب ہونے اور عام مسلمانوں کے بارے میں غلط خدشات پھیلنے کا اندیشہ ہے۔کمیشن نے جے این یو کو مشورہ دیا ہے کہ ’’اسلامی دہشت گردی‘‘ کے بجائے ’’مذہبی دہشت گردی‘‘ کو موضوع بنایا جائے اور اس کے تحت مختلف مذاہب کو استعمال کرکے دہشت گردی پھیلانے کے واقعات کا احاطہ کیا جائے۔ اس توسع کے ساتھ موضوع پرریسرچ کرنے سے مسئلے کا صحیح ادراک ہوگا اور کیمپس کے اندر اور باہر فرقہ واریت سے بچا جاسکے گا۔ کمیشن نے جے این یو کو مطلع کیا کہ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Ad
Ad

SPORTS

A tough test awaits Indian at Indonesia Masters

Olympic silver medalist P.V. Sindhu will resume her quest for glory in the new season, while Saina Nehwal and ...

Tata Steel Chess: Viswanathan Anand beats Shakhriyar Mamedyarov

Five-time world champion Viswanathan Anand scored a crushing victory over Shakhriyar Mamedyarov of Azerbaijan ...

ICC Test Rankings: India, Virat Kohli maintain top positions

A maiden Test series triumph in Australia saw both the Indian team and its skipper Virat Kohli consolidate the ...

Ad

MARQUEE

Major buildings in India go blue as part of UNICEF’s campaign on World Children’s Day

Our Correspondent / New Delhi Several monuments across India turned blue today Nov 20 – the World Children ...

US school students discuss ways to gun control

             Students  discuss strategies on legislation, communities, schools, and mental health and ...

CINEMA /TV/ ART

PM inaugurates National Museum of Indian Cinema

AMN / MUMBAI Prime Minister Narendra Modi Saturday said the government will soon start a single window cleara ...

Noted Film actor Kader Khan passes away in Canada

Born in Kabul, Khan made his acting debut in 1973 with Rajesh Khanna's "Daag" and has featured in over 300 fil ...

Ad

@Powered By: Logicsart