Ad
FreeCurrencyRates.com

इंडियन आवाज़     26 Sep 2018 08:24:41      انڈین آواز
Ad

’’اسلامی دہشت گردی‘‘ کورس کے بارے میں جے این یو کا جواب

JNU

نئی دہلی : دہلی اقلیتی کمیشن کے نوٹس کے جواب میں جے این یو کے رجسٹرار ڈاکٹر پرمودکمار نے بتایا ہے کہ جے این یو کی اکیڈمک کاؤنسل میں ’’اسلامی دہشت گردی‘‘ کے کورس کے بارے میں کوئی تجویز نہیں رکھی گئی ہے۔ساتھ ہی انہوں نے مجوزہ سینٹر فار نیشنل سیکیورٹی اسٹڈیز کے بارے میں تصوراتی ورقہ (کانسپٹ پیپر ) کی کاپی بھی منسلک کی ہے۔ انہوں نے کمیشن کے سوال کے جواب میں بتایا ہے کہ جے این یو کو اس کی کوئی اطلاع نہیں ہے کہ ’’ اسلامی دہشت گردی‘‘ کے بارے میں کوئی کورس کسی ہندوستانی یا بیرون ملک یونیورسٹی میں پڑھایا جاتا ہے۔رجسٹرار نے اپنے جواب میں یہ بھی بتایا کہ تصوراتی ورقے کے بارے میں جو تبصرے اکیڈمک کاؤنسل کے ممبران کی طرف سے موصول ہوئے ہیں ان پر غور کرنے کے لئے یونیورسٹی نے ایک کمیٹی کی تشکیل کی ہے۔ رجسٹرار نے اپنے جواب کے ساتھ مجوزہ سنٹر کے سلسلے ہونے والی اکیڈمک کاؤنسل کی میٹنگ کی روداد کی کاپی بھی بھیجی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ یونیورسٹی کے دوسرے شعبوں اور سنٹروں میں پڑھائے جانے والے مواد مجوزہ سنٹر میں نہ پڑھائے جائیں تاکہ تکرار (اورلیپنگ) نہ ہو اور اگر کسی ممبر کو تصوراتی ورقے کے بارے میں کوئی تجویز دینی ہو تو وہ رجسٹرارکو دے دے تاکہ اسے مجوزہ کمیٹی کے پاس بھیجا جاسکے۔مجوزہ کمیٹی کو اکیڈمک کاؤنسل کی یکم دسمبر ۲۰۱۷ کی میٹنگ میں تشکیل دیا گیا تھا۔ کمیٹی نے کئی میٹنگیں منعقد کیں اور بالآخر یکم مئی ۲۰۱۸ کی میٹنگ میں مذکورہ تصوراتی ورقے کو پاس کیا۔

رجسٹرا رجے این یو کی یقین دہانی کے برعکس، تصوراتی ورقے کے مطابق مجوزہ سنٹر جن بنیادی میادین (Key areas) پر ریسرچ کرے گا اور بالآخر ان کو کو رس میں داخل کرے گا، ان میں ’’اسلامی دہشت گردی‘‘ (Islamic Terrorism) شامل ہے۔ کمیشن نے جے این یو کو مطلع کیا ہے کہ اگرچہ مجوزہ سنٹر ایک اچھی شروعات ہے اور ملک کو اس کی ضرورت ہے مگر ’’اسلامی دہشت گردی‘ ‘ کو اس سنٹر کے مضامین میں ریسرچ اور ٹیچنگ کے لئے داخل کرنا ایک کج فہمی کا نتیجہ ہے کیونکہ نہ صرف یہ ایک سیاست زدہ موضوع ہے بلکہ اس سے کیمپس کے اندر اور باہر فرقہ وارانہ فضا خراب ہونے اور عام مسلمانوں کے بارے میں غلط خدشات پھیلنے کا اندیشہ ہے۔کمیشن نے جے این یو کو مشورہ دیا ہے کہ ’’اسلامی دہشت گردی‘‘ کے بجائے ’’مذہبی دہشت گردی‘‘ کو موضوع بنایا جائے اور اس کے تحت مختلف مذاہب کو استعمال کرکے دہشت گردی پھیلانے کے واقعات کا احاطہ کیا جائے۔ اس توسع کے ساتھ موضوع پرریسرچ کرنے سے مسئلے کا صحیح ادراک ہوگا اور کیمپس کے اندر اور باہر فرقہ واریت سے بچا جاسکے گا۔ کمیشن نے جے این یو کو مطلع کیا کہ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Ad
Ad
Ad

MARQUEE

Policy for Eco-tourism will provide livelihood to local communities

AMN / NEW DELHI GOVERNMENT OF INDIA has prepared a policy for Eco-tourism in forest and wildlife areas, which ...

Living index: Pune best city to live in, Delhi ranks at 65

The survey was conducted on 111 cities in the country. Chennai has been ranked 14 and while New Delhi stands a ...

Ad

@Powered By: Logicsart